پاکستان

ٹیکس حکومت کی نواز شریف پرکڑی تنقید

لاہور: نواز شریف کا سیاسی مستقبل تو نہیں ہے لیکن وہ ذاتی مستقبل کے لیے دعا کریں یہ کہنا ہے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا-

ٹیکس حکومت کے وزیراطلات کا میڈیا سےگفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وزیراعظم کا دورہ لاہور چل رہا ہے جہاں ان کی ملاقاتیں جاری ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی زیر صدارت پہلی میٹنگ بلدیاتی نظام سے متعلق ہے کیوں کہ موجودہ بلدیاتی نظام آئین کی شرط پوری نہیں کرتا اور موجودہ بلدیاتی نظام کی بنیاد ایسی رکھی گئی کہ وزرائے اعلیٰ ڈکٹیٹر بن جائیں۔

ان کا کہنا ہے کہ موجودہ بلدیاتی نظام کو تبدیل کیے بغیر معاملہ آگے نہیں بڑھے گا اور نئے بلدیاتی نظام میں منتخب نمائندہ بااختیار ہو گا۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ خیبرپختونخوا میں ویلج کونسل کا تجربہ بھی کیا گیا جو ایک چھوٹا یونٹ ہے۔

انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں اس بات کا جائزہ لیا گیا کہ ویلج کونسل بنائی جائے یا یونین کونسل کے سائز  کا ازسرنو جائزہ لیا جائے۔

وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ پنجاب کے کابینہ اجلاس کی صدارت وزیراعظم نے کی اور وزراء کو ٹارگٹس دیئے ہیں، ہم چاہتے ہیں ہماری حکومت (ن) لیگ کی حکومت سے مختلف ہو اور عوامی نمائندوں پر مشتمل ہو۔

مسلم لیگ ن کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) سے جب بھی ریکارڈ مانگا گیا تو وہاں آگ لگ جاتی تھی، وزیر اعظم نے کہا ہے کہ جہاں جہاں آگ لگی وہاں تحقیقات کی جائیں۔

ان کا کہنا ہے کہ ابھی اسکینڈلز  کھلیں گے اور گزشتہ پنجاب حکومت میں شامل افراد زیادہ عرصہ جیل سے باہر نہیں رہ  سکیں گے، شہباز شریف نے ایک لاکھ 10 ہزار کروڑ روپیہ خرچ کیا جب کہ میٹرو بسوں کو چلانے کے لیے 8 ارب روپے حکومت کو سالانہ دینا پڑتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نوازشریف کا سیاسی مستقبل تو ہے نہیں البتہ اپنے ذاتی مستقبل کے لیے وہ دعا کریں۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ نواز شریف صاحب سے ہماری ذاتی لڑائی نہیں ہے، وہ قوم کے پیسے واپس لے آئیں تو ہماری لڑائی ختم ہو جائے گی۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close