پاکستان

سپریم کورٹ کا نندی پور کیس کے متعلق ایسا فیصلہ سامنے آگیا کے سب دنگ رہ گئے

سپریم کورٹ کا نندی پور کیس کے متعلق ایسا فیصلہ سامنے آگیا کے سب دنگ رہ گئے
اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے نندی پور منصوبے سے متعلق کیس دوبارہ کھو لنے کا فیصلہ کر لیا

سپریم کورٹ نے وفاق، پیپکو اور واپڈا سمیت دیگر فریقین کو طلب کر لیا – یاد رہے کے نندی پور پراجیکٹ گزشتہ دور حکومت میں تعمیر کیا گیا تھا-جس کے بارے میں ایک برا دعوہ یہ سامنے آیا تھا کہ اس سے 525 میگاواٹ بجلی حاصل ہو گی -لہزا مختلف سیاسی جماعتوں نے اس پروجیکٹ میں کرپشن کے الزمات عائد کیے گئے تھے۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی زیر نگرانی 3 رکنی بینچ نے نندی پور پاور پراجیکٹ سے متعلق کیس کی سماعت کی۔

چیف جسٹس نے خواجہ آصف کو مخاطب کرکے کہا، خواجہ صاحب جب آپ وزیر تھے تو مسائل حل کیوں نہیں کیے، آپ کے پاس اتھارٹی تھی، مسئلے حل کراتے۔

خواجہ آصف نے جواب دیا، ‘مجھےکیس سے الگ کردیا گیا تھا کہ مفادات کا ٹکراؤ ہے’۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آپ کو کیس سے الگ کیا گیا تھا لیکن تحقیقات تو کرا سکتے تھے۔

خواجہ آصف نے کہا کہ ایک کمیشن رحمت علی جعفری کی سربراہی میں بنا تھا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ اس کمیشن نے ذمہ داری بھی طے کردی تھی۔

خواجہ آصف نے جواب دیا کہ اس میں حکم تھا کہ نندی پور اور چیچوں کی ملیاں پر کام مکمل کریں۔

اس موقع پر جسٹس اعجازلاحسن نے ریمارکس دیئے کہ آپ نے 2011 میں درخواست دائر کی ،اب 7سال ہوگئے، آپ بتائیں اب اس درخواست میں کیا رہ گیا کہ اسے سنیں۔

خواجہ آصف نے جواب دیا کہ نندی پور منصوبہ اب 5 سال سے کام کر رہا ہے، منصوبہ ٹھیکے پر نہیں، اونر شپ حکومت کی ہے۔

جسٹس عمرعطابندیال نے ریمارکس دیئے کہ آپ کی درخواست میں وزارت قانون کی اعلیٰ شخصیت کا ذکر ہے، آپ نے اس پر الزام لگایا کہ اس نے تاخیر کی۔

خواجہ آصف نے جواب دیا، ‘جی اس شخصیت نے روکا تھا اور کمیشن نے بھی مان لیا تھا کہ تاخیر سے منصوبےکی لاگت بڑھی’۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ جس دور میں جہاں بھی گڑبڑ ہوئی، اسے ٹھیک کرنے کی کوشش کریں گے۔

اس کے ساتھ ہی سپریم کورٹ نے نندی پور منصوبے سے متعلق کیس ری اوپن کرتے ہوئے وفاق، پیپکو اور واپڈا سمیت دیگر فریقین کو نوٹسز جاری کردیئے۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close