پاکستان

نواز شریف سالگرہ جیل میں منائیں گے یا گھر میں؟ بڑی خبر آگئی

اسلام آباد : سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف نیب ریفرنسز کا فیصلہ 24 دسمبر بروز پیر کو سنایا جائے گا۔ سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف ریفرنسز کے فیصلے پر کئی چہ مگوئیاں ہو رہی ہیں اور ایک نئی بحث کا آغاز ہو گیا ہے کہ نواز شریف اپنی سالگرہ جیل میں منائیں گے یا اپنے گھر میں اہل خانہ کے ساتھ منائیں گے۔

دوسری جانب احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے نوازشریف کے خلاف ریفرنسز کا فیصلہ تحریر کرنے کا آغاز کر دیا ہے۔ عدالتی عملے کی ہفتہ اوراتوار کی چھٹیاں منسوخ کردی گئی ہیں اور عملے کو اپنی حاضری یقینی بنانے کی ہدایات کی گئی ہیں ۔ گذشتہ روز نماز جمعہ کے بعد بھی جج ارشد ملک عدالت میں موجود رہے اور عدالتی سٹاف کو بھی دیر تک رُکنے کی ہدایت کی۔

قبل ازیں احتساب عدالت میں نوازشریف کے وکلا نے یوکے لینڈ رجسٹری سے تصدیق شدہ ایک اور دستاویز ریکارڈ کا حصہ بنانے کی استدعا کی جسے منظور کر لیا گیا۔ دستاویز حسن نواز کی فروخت شدہ پراپرٹی سے متعلق ہیں۔ پراسیکیوٹر نیب سردار مظفر نے اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ کیس فیصلے کے لیے مقرر کر دیا گیا ہے اور یہ نئی دستاویز لے کر آگئے ہیں ۔ ایک سال اور 3 ماہ تک انہوں نے دستاویزات پیش نہیں کیں۔

نواز شریف کے وکلا نے عدالت سے فیصلے کا دن بدلنے کی بھی استدعا کردی۔ وکلا کا کہنا تھا کہ فیصلہ نواز شریف کی سالگرہ (25 دسمبر) کے بعد سنایا جائے اور فیصلے کی تاریخ 24 سے تبدیل کر کے 26 دسمبر رکھ دیں۔ جج ارشد ملک نے کہا کہ پوری کوشش ہے فیصلہ 24 دسمبر کو ہی سناؤں۔اگر فیصلہ لکھا نہ جاسکا تو تاریخ تبدیل کر دیں گے ۔ 24 دسمبر کو نواز شریف کے خلاف ریفرنسز کا فیصلہ سنانے کے پیش نظر احتساب عدالت کے ججز محمد بشیر اور ارشد ملک کی سیکورٹی میں ہنگامی طور پر اضافہ کر دیا گیا ہے۔

جبکہ 24 دسمبر کو احتساب عدالت کے احاطے میں کسی بھی غیر متعلقہ شخص کے داخلے پر پابندی بھی عائد کر دی گئی ہے۔24 دسمبر کے لیے احتساب عدالت کی سکیورٹی میں بھی سخت اضافہ کر دیا گیا ہے۔ ڈپٹی کمشنر اسلام آبادعدالت کو سکیورٹی اقدامات سے متعلق آگاہ کریں گے ۔ ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم نوازشریف فیصلہ سننے خود عدالت جائیں گے ۔ذرائع کے مطابق اس موقع پر سینئرلیگی رہنما بھی نوازشریف کے ساتھ ہوں گے جبکہ لیگی کارکنان بھی اظہاریکجہتی کے لیے احتساب عدالت جائیں گے ۔ذرائع نے بتایا کہ پارٹی کی جانب سے لیگی کارکنوں کو احتساب عدالت پہنچنے کی کوئی کال نہیں دی گئی البتی کارکنان اپنے قائد سے اظہار یکجہتی کے لیے عدالت ضرور جائیں گے۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close