پاکستان

سا بق صدرآصف زرداری کس کے ساتھ مل کے عمران خان کی حکومت گرانے والے ہیں ؟ بڑی خبر لیک

اسلام آباد :معروف اینکر عمران خان کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے کچھ روز قبل کہا تھا کہ بلیک میل ہو کر وزارتیں نہیں دوں گا اور نہ ہی میں فارورڈ بلاک سے ڈرتا ہوں اس کا مطلب یہ ہے کہ کچھ نہ کچھ ان کے ذہن میں چک ضرور رہا ہے۔اور سابق صدر آصف علی زرداری کی شہباز شریف سے ایک اور ملاقات ہوئی جس میں انہوں نے حکومت گرانے کے لیے شہباز شریف سے مسلم لیگ ن کی مدد مانگ لی ہے۔

جب کہ دوسری جانب مسلم لیگ ن کا ایک اجلاس ہوا جس میں یہ فیصلہ ہوا ہے کہ مڈ ٹرم الیکشن کی تیاریاں شروع کی جائیں اور اس کے ساتھ ساتھ عوامی رابطہ مہم شروع کی جائے گی جس کو نواز شریف لیڈ کریں گے جب کہ ان کی گرفتاری کی صورت میں مریم نواز تمام مہم کو لیڈ کریں گی۔

سابق حکمران جماعت پاکستان مسلم لیگ ن نے 30 دسمبر سے عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

اس حوالے سے پیر کے روز سابق وزیر اعظم محمد نوازشریف اور محمد شہباز شریف کی زیر صدارت مسلم لیگ ن کا اعلیٰ سطح کا اجلاس اسلام آباد میں منعقد ہوا ۔ اجلاس میں سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے پارٹی رہنماؤں کو ن لیگ کے تنظیمی امور پر بریفنگ دی۔ اجلاس میں ملک بھر میں پاکستان مسلم لیگ ن کی از سر نو تنظیم سازی کا معاملہ زیر غور آیا۔ اس کے علاوہ پارلیمنٹ میں قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل اور اپوزیشن کو ملنے والے حصے پر بھی بات چیت کی گئی۔

ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن نے 30 دسمبر سے عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلے میں ابتدائی طور پر ہر ڈویژنل ہیڈکوارٹرز میں جلسے کیے جائیں گے۔ عوامی جلسوں سے کئی ماہ سے سیاسی سرگرمیوں سے دور سابق وزیراعظم نواز شریف بھی خطاب کریں گے۔ جبکہ ن لیگ کی جانب سے منعقد کیے جانے والے جلسوں سے احسن اقبال، خواجہ آصف، شاہد خاقان عباسی، مشاہد اللہ خان بھی خطاب کریں گے۔ جبکہ یہ بھی بتایا جا رہا ہے کہ نواز شریف کو ممکنہ سزا کی صورت میں سابق دختر اول مریم نواز بھی عوامی رابطوں کا حصہ بن جائیں گی۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close