پاکستان

نئےپاکستان میں بیوی کو موبائل فون سوشل میڈیا یا کوئی نوکری کرنے سے روکا تو کیا سزا ملے گی، تشویش ناک خبر

لاہور: نئے پاکستان کے اب نئے قانون ہوں گے، اگر کسی عورت نے اپنے شوہر پر جھوٹا الزام عائد کیا تو 50 ہزار جرمانہ عائد کرنا پڑسکتا ہے اور اگر شوہر نے بیوی کو موبائل فون سوشل میڈیا یا کوئی نوکری کرنے سے روکا تو 3 ماہ قید ہوسکتی ہے-

تحریک انصاف کے حکومت نے نئے پاکسان میں نیا قانون لانے کا فیصلہ کیا ہے اور اس قانون کے مطابق عورتوں اور مردوں کے لیے سخت سزا رکھی گئی ہے-

اب تک کی تازہ ترین میڈیا رپورٹس کے مطابق صوبہ خیبر پختونخوا میں گھریلو تشدد کی روک تھام کے لیے ایک قانون تیار کیا گیا ہے جسے بحث اور منظوری کے لئے صوبائی اسمبلی کے آئندہ اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔

اس بل میں شامل کیے گئے نکات کے مطابق گھریلو تشدد کی صورت میں خاوند کو 30 ہزار روپے جرمانہ اور تین ماہ قید ہو گئی اور مسلسل گھریلو تشدد کرنے پر بھی خاوند کو سزا ہو گئی۔تاہم یہاں پر خواتین کے لیے بھی قانون بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے وہ خواتین جو اپنے خاوند پر الزام لگاتی ہیںاور پھر ثابت نہیں کر پاتی انہیں 50 ہزار روپے جرمانہ ہوگا۔

علاوہ ازیں اگر خاوند نے اپنی بیوی کو دفتر یا کسی بھی پبلک پلیس پر کام کرنے سے روکا تو اُسے بھی سزا دی جائے گی-بل میں مزید کہا گیا کہ شوہر اپنی بیوی کو سوشل میڈیا موبائل فون یا اپنے رشتے داروں سے بھی بات کرنے سے نہیں روک سکتا-بل میں مزید کہا گیا ہے کہ ناچاکی کی صورت میں خاوند کو اہلیہ کی سلامتی کی ضمانت دینا ہوگی اور خاوند اہلی اور اپنے بچوں کو نان نفقہ اور دیگر اخراجات دینے کا بھی پابند ہوگا۔

مجوزہ بل کے مطابق ناچاقی کی صورت میں تمام عائلی قوانین لاگو ہوں گے۔مجوزہ بل کے مطابق اس کمیٹی میں ضلعی ہیلتھ افسر،سوشل ویلفیئر آفیسر پبلک پراسیکیوٹر اور پولیس سے ممبران شامل ہوں گے اس کے علاوہ سول سوسائٹی سے چار ممبران اور ویمن کمیشن کی ضلعی سربراہ بھی کمیٹی کا حصہ ہوں گی۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close