پاکستان

مولانا سمیع الحق کے قتل کے متعلق ملازمین کا بڑا انکشاف

راولپنڈی: مولانا سمیع الحق کے قتل کا مقدمہ ن کے بیٹے حامد الحق کی مدعیت میں تھانہ ایئرپورٹ میں درج کر لیا گیا-

اب تک کی تازہ ترین اطلاعات کے مطابق مولانا فضل الحق کے گرفتار ملازمین نے بڑا انکشاف کیا ہے کہ جس کے مطابق مولانا سمیع الحق سے دو افراد ملنے آئے تھے جو مولانا صاحب کے جاننے والے تھے اور انہوں نے مولانا سمیع الحق سے اکیلے میں بات کرنے کی درخواست کی۔

مولانا فضل الحق کے قتل کا مقدمہ ان کے بیٹے حامد الحق کی مدعیت میں تھانہ ایئرپورٹ میں دفعہ 302 کے تحت درج کرلیا گیا۔

ایف آئی آر کے متن کے مطابق مولانا سمیع الحق پر حملہ شام ساڑھے 6 بجے ہوا اور ان کے پیٹ، دل، ماتھے اور کان پر چھریوں کے 12 وار کیے گئے۔

فرانزک ماہرین اور پولیس افسران نے ولانا سمیع الحق کا فون، چشمہ اور دیگر چیزیں بھی قبضے میں لے کر فنگر پرنٹس حاصل کرلیے ہیں اور مجرم کو پکڑنے کے لیے تمام تر اقدامات کیے جارہے ہیں اور ہائوسنگ سوسائٹی کے سی سی ٹی وی کیمروں سے بھی مدد لی جارہی ہے-

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close