پاکستان

رشتہ بھیجا ہے، لڑکی انکار نہیں کر سکتی، راجن پور کی پنچایت کا افسوس ناک فیصلہ

راجن پور میں ایک پنچایت نے انوکھہ فیصلہ سناتے ہوئے دو ڈاکٹر بہنوں کا رشتہ غیر تعلیم یافتہ کزنز سے شادی لازمی قرار دیدی اور رشتے سے انکار پر زرعی زمین پر قبضے کا فیصلہ بھی سنا دیا۔

راجن پور کی جاہلانہ فیصلہ کرنے والی پنچایت کے سرپنج رفیق مزاری نے کہا کہ طارق مزار کو رشتہ دیا تھا اور فیصلہ ہوا تھا وہ بھی رشتہ دیں گے۔

انھوں نے مزید کہا کہ ہمارا خاندانی رواج ہے، رشتہ کے بدلے رشتہ لیتے ہیں، جسے وٹہ سٹہ کہتے ہیں۔

سرپنج نے کہا کہ رشتہ نہ دیا تو 123 ایکڑ زرعی زمین پر قبضہ کر لیں گے اور کاشت بھی نہیں کرنے دیں گے۔

اور دوسری طرف متاثرہ بہنوں کے بھائیوں نے موقف اختیار کیا ہے کہ بہنوں کی شادی سے انکار پر پنچایت کے ذریعے دباؤ ڈالا جا رہا ہے، پنچایت نے بہنوں کی شادی یا پھر زمین سے دستبردار ہونے کا حکم دیا ہے۔

طارق مزاری نے کہا کہ پولیس کو درخواست دی ہے لیکن بااثر افراد کیخلاف کوئی کارروائی نہیں ہو رہی۔

اور دوسری طرف رجحان کے ڈی ایس پی نے موقف اختیار کیا ہے کہ حضور بخش اور جاگن مزاری سگے بھائی ہیں اور یہ دو بھائیوں کا جھگڑا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ حضور بخش نے بیٹی کی شادی جاگن مزاری کے بیٹے سے کی تھی لیکن جاگن مزاری اپنی بیٹیوں کی شادی حضور بخش کے بیٹوں سے نہیں کرنا چاہتا۔

ڈی ایس پی کا کہنا تھا کہ زمین اُن کی وراثتی ہے اور دونوں بھائیوں کے درمیان زمین کا جھگڑا ہے۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close