پاکستان

چیف جسٹس میاں ثاقب نثاربھی آسیہ بی بی کیس کے متعلق بول پڑے

 اسلام آباد: چیف جسٹس ثاقب نثار کا کہنا ہے کہ آسیہ بی بی کا فیصلہ دینے والے ججز کسی سے کم عاشق رسول نہیں اور ناموس رسالت پر ہم شہید ہونے کے لیے بھی تیار ہیں۔

چیف جسٹس پر مبنی 3 رکنی بنچ نے آج حکومت کی طرف سے دائر آئی کی درخواست کے دوران دے-

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ‘رسول پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی توہین کسی کے لیے قابل برداشت نہیں، نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی ناموس پر ہم اپنی جانیں قربان کرنے کے لیے بھی تیار ہیں، لیکن اگر کسی کے خلاف کیس بنتا ہی نہ ہو تو اسے سزا کیسے دیں؟’

چیف جسٹس نے مزید کہا کہ ‘ایمان کسی کا کم نہیں ہے، ہم صرف مسلمانوں کے قاضی نہیں ہیں’۔ ‘ایمان کسی کا کم نہیں ہے، ہم صرف مسلمانوں کے قاضی نہیں ہیں’۔ اور ساتھ ہی انھوں نے یہ بھی کہا کہ بنچ میں بیٹھے کئی ججز درود شریف پڑھتے رہتے ہیں’۔

چیف جسٹس نے آسیہ مسیح کے بارے میں مزید کہا کہ ‘فیصلہ کلمے سے شروع کیا، جس میں دین کا سارا ذکر بھی کیا ہے’۔

چیف جسٹس کا مزید کہنا تھا کہ ‘ہم نے اللہ کی ذات کو نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات سے پہچانا ہے، اس کے بغیر ایمان مکمل نہیں’۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close