انٹر نیشنل

سعودی صحافی خاشقجی کیا خطرناک کام کرنے والا تھا ؟ سب سامنے آگیا

برطانیہ نے ایک بڑے راز سے پردے اٹھاتے ہوئے کہا کہ ترکی میں قتل ہونے والے سعودی صحافی جمال خاشقجی یمن میں کیمیائی حملوں کی تفصیلات ظاہر کرنے والے تھے۔

برطانیہ نے دعوہ کیا ہے کہ رطانیہ کی انٹیلی جنس ایجنسی کو جمال خاشقجی کے قتل سے تین ہفتے قبل صحافی کےاغواکی سازش کا علم ہو گیا تھا۔

برطانیہ نے دعوہ کیا ہے کہ سعودی شاہی خاندان سے تعلق رکھنے والے کسی فرد نے جمال خاشقجی کو اغوا کر کے سعودی عرب لانےکا حکم دیا تھا۔

رپورٹس میں مزید کہا گیا ہے کہ جمال خاشقجی یمن میں کیمیائی حملوں کی تفصیلات ظاہر کرنے والے تھے لیکن اس سے پہلے ہی انہیں سعودی قونصلیٹ میں قتل کر دیا گیا۔

ترک صدر نے سعودی پراسیکیوٹر سے مطالبہ کہا کہ معاملے کا پتا لگائیں اور تحقیقات میں کچھ مخصوص افراد کو بچانے کی کوشش نہ کی جائے۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close