پاکستان

منی لانڈرنگ کیس میں ایک اور بڑی گرفتاری سامنے آگئی

کراچی: وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے منی لانڈنگ کیس میں اومنی گروپ کے مالک انور مجید کے ایک اور بیٹے کو عدالت سے گرفتار کرلیا-

آج سپریم کورٹ کراچی رجسٹر میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی زیرصدارت لارجر بنچ نے منی لانڈرنگ کیس کی سماعت کی-

سماعت کے دوران اومنی گروپ کے مالک انور لوائی کے بیٹے بھی عدالت کے روبرو پسش ہوئے اور وفاقی تحقاتی ادارے ایف آئی اے نے انہیں احاطہ عدالت سے گرفتار کر لیا-

چینی کے سٹاک غائب ہونے پر چیف جسٹس نے شدید برھمی کا اظہار کیا اور کہا کہ قوم کے اثاثوں کے 14 ارب روپے میں سے 11 ارب روپے کی چینی غائب کردی گئی ہے، ایف آئی اے اور پولیس کہاں تھی؟۔

ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن نے کہا کہ 9 شوگر ملیں اومنی گروپ کی چھتری کے نیچے چل رہی ہیں جن میں نوڈیرو شوگر مل، باندھی، کھوسکی شوگر، انصاری شوگر، ٹنڈو الہ یار شوگر مل، باوانی، نیو دادو ، لارڈ شوگر مل اور چمڑ شوگر مل شامل ہیں، جب کہ چینی غائب کرنے پر اومنی گروپ کے خلاف 9 مقدمات درج کرلیے گئے ہیں، ان شوگر ملوں کے چیف ایگزیکٹو اومنی گروپ کے مالکان ہی ہیں، اومنی گروپ کے کچھ دفاتر کراچی اور کچھ اندرون سندھ میں ہیں۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close