انٹر نیشنل

ترکی کی مجسد جہاں لوگ 37 سال تک غلط سمت میں نماز ادا کرتے رہے

انقرہ: ترکی کی ایک ایسی حیران کن مسجد جہاں لوگ غلط سمت میں ہی نماز پرھتے رہے-

اب تک کی حیران کن خبر سامنے آگئی جس کے مطابق ترکی کی ایک مسجد میں مازی 37 سال تک غلط سمت میں نماز ادا کرتے رہے اور اس کے بعد اس بات کی تصدیق اس مسجد میں آنے والے ایک نئے امام نے کی-

دی انڈیپنڈنٹ نے ترک میڈیا کے حوالے سے بتایا کہ 1981 میں مغربی صوبے یالووا کے علاقے سگورین میں واقع ایک مسجد کے محراب کی تعمیر کے دوران غلطی ہوئی، جس کے باعث خانہ کعبہ کی سمت غلط ہوگئی۔

اس میں مزید کہا گیا کہ گذشتہ سال تعینات ہونے والے نئے امام عیسٰی کایا نے اس غلطی کو نوٹ کیا اور مقامی مفتی سے مشورہ لینے کا فیصلہ کیا۔

بعد ازاں اس بات کی تصدیق کردی گئی کے سمت غلط ہے-

امام مسجد اور دیگر حکام نے ایک تجویز دی ہے کہ مسجد کو شہید نا کیا جائے بلکہ تیر کے نشان سے درست سمت کی نشان دہی کہ جائے-

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close