پاکستان

ن لیگ کے بعد پی ٹی آئی بھی میدان میں وفاقی وزیر اطلات کا دبنگ بیان

ن لیگ کے اعلی وفد کے اجلاس کے بعد پی ٹی آئی کا بھی شدید رد عمل وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے اپوزیشن کی کلاس لے لی-

پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کرپٹ لوگوں کے خلاف بات کرتے ہیں تو اپوزیشن والے پتہ نہیں کیوں احتجاج اور واک آؤٹ پر آجاتے ہیں۔

فواد چوہدری نے کہا کہ اب کیا سیف الرحمان کو چیئرمین نیب لگانے والے سیاسی انتقام کی بات کریں گے؟

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے واضح طور پر کہا کہ پاکستان لوٹنے والوں کا احتساب ہو گا۔

انتقامی کاروائیوں کا جواب دیتے ہوئے انھوں نے جواب دیا کہ ہمیں انتقامی کارروائی کا سبق نہ پڑھائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سیف الرحمان اور نیب کے ذریعے بینظیر شہید کو نشانہ بنایا گیا، یہ جتنا بھی رو لیں، احتساب کا عمل نہیں رکے گا۔

ایک سوال کے جواب میں فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ اگر وزیراعظم کا نیب پر کنٹرول ہوتا تو آدھے لوگ یہاں تقریر نہ کر رہے ہوتے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ ہمارے اپنے لوگوں پر نیب کے الزامات لگے ہیں لیکن ہم نے اثر انداز ہونےکی کوشش نہیں کی، ہمارے وزیر کے خلاف نیب کی انکوائری شروع ہوئی تو انہوں نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دیدیا۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت کا شہباز شریف کی گرفتاری سے کوئی تعلق نہیں ہے، نواز شریف کی حکومت میں شہباز شریف پر مقدمہ بنا تھا۔

انہوں نے کہا کہ کبھی فالودے والے کے اکاؤنٹ سے کروڑوں روپے نکل رہے ہیں اور کبھی کسی کے اکاؤنٹ سے رقم نکل رہی ہے، سب کو معلوم ہے کہ منی لانڈرنگ ہورہی ہے۔

ضمنی انتخاب سے متعلق سوال پر وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ ابھی میدان میں صرف ایک گھوڑا ہے جس پر پی ٹی آئی سوار ہے، ضمنی الیکشن میں میں پی ٹی آئی کلین سوئپ کرےگی۔

 

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close