دلچسپ و عجیبپاکستان

8 اکتوبر کو آنے والے زلزلے میں حیران کن واقعہ

آئیے اک نظر ڈالیں 8 اکتوبر کو آنے والے ایک ہولناک زلزلے کی

8 اکتوبر کو آنے والا تباہ کن زلزلہ ابھی ہم سب میں سے کسی کو نہیں بھولا ہوگا، 8 اکتوبر کو پاکستان میں قیامت سگراں کے مناظر تھے پاکستان کے ایک بڑے صوبے خیبرپختونخوا کے کئی اضلاع سمیت آزادکشمیر میں ایک تباہ کن زلزلہ آیا جس میں 70 ہزار سے زائد افراد جاں بحق اور ہزاروں املاک منہدم ہوگئی تھیں۔

اس زلزلے کے دوران ایک انوکھہ واقعہ بھی رونما ہوا جو کہ جنت نما خطے آزاد کشمیر کے دارالحکومت مظفرآباد کی ریڈیو کالونی میں پیش آیا-

اس زلزلے میں ایک موجزہ یہ بھی ہوا کہ ایک 9 سال کے بچے کو 4 دن بعد زندہ نکال لیا گیا-

ابوبکر اس وقت 9 سال کا تھا جب یہ خوفناک حادثہ پیش آیا اور اچانک تین منزلوں پر محیط گھر زمین بوس ہو گیا اور ابوبکر ملبے تلے دب گیا بعد ازیں 4 دن بعد پاک فوج نے انکو نکالا-

ان کی عمر اب 24 سال ہیں لیکن ان کے دل وہ خوفناک یادیں اب بھی تازہ ہیں-

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ‘8 اکتوبر کو میں گھر کے برآمدے میں بیٹھا تھا کہ اچانک زمین ہلنے لگی’۔

ابوبکر نے بتایا، ‘میں ڈرائنگ روم کی طرف بھاگا کہ اچانک چھت نیچے آنے لگی تو میں وہیں نیچے جھک گیا’۔

انہوں نے بتایا، ‘اسی حالت میں 3، 4 روز گزر گئے، مجھے لوگوں کے بولنے کی اور ہیلی کاپٹروں کے گزرنے کی آوازیں آتی تھیں’۔

ابوبکر کے مطابق ‘میں اس عرصے میں مسلسل آیت الکرسی کا ورد کرتا رہا  اور پھر چوتھے دن مجھے آرمی نے وہاں سے نکالا’۔

انہوں نے مزید بتایا کہ ‘جس دن زلزلہ آیا، میرا پہلا روزہ تھا، جو پھر تین چار دن تک چلا گیا، کیونکہ ملبے تلے نہ کھانے کو کچھ ملا اور نہ ہی کچھ پینے کو’۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close