پاکستان

پی ٹی آئی والوں کی غنڈہ گردی ایک بار پھر کھل کے سامنے آگیا

لاہور: تحریک انصاف پنجاب کے سینئر صوبائی وزیر میاں محمود الرشید کے غنڈہ نما بیٹے نے پولیس والو کو یرغمال بنا لیا-

پی ٹی آئی کے سیبئر وزیر کے بیٹی کار میں لڑکی کے ساتھ نایبا حرکتیں پکڑے گئے اور دونوں قابل اعتراض حالت میں تھے جب پولیس اہلکاروں نے گاڑی کو روکا تو محمود الرشید کے بیٹے نے پولیس کو گالیوں سے نوازا اور خود کو سابق اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی میاں محمود الرشید کا بیٹا بتایا-

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ کار سوار نے اپنے گارڈز کی مدد سے پولیس اہلکاروں کو زدو کوب کیا اور سرکاری اسلحے و سرکاری گاڑی سمیت اغوا کرکے ساتھ لے گئے۔ دیگر پولیس اہلکاروں نے گاڑی کا پیچھا کیا تو تھوڑی دیر بعد مغوی پولیس اہلکاروں کو سرکاری اسلحے سمیت خالی پلاٹ میں پھینک دیا گیا تھا۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ پولیس اہلکاروں کو سفید رنگ کی کار ایل ای سی 4968 میں اغوا کیا گیا تھا اور جب سیف سٹی کے کیمروں کی مدد سے پتہ کیا گیا تو کار پنجاب کے سینئر وزیر اور تحریک انصاف کے رہنما میاں محمود الرشید کے ذاتی نام پر رجسٹرڈ نکلی۔ واقعے کا مقدمہ ندیم نامی کانسٹیبل کی درخواست پر 5 نامعلوم افراد کے خلاف تھانہ غالب مارکیٹ میں درج کر لیا گیا ہے۔

دوسری جانب میاں محمود الرشید نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ لاہور واقعے میں میرا بیٹا ملوث نہیں اور بیٹے پر جو الزام لگایا جارہا ہے، وہ من گھڑت ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ واقعے کے حوالے سے میڈیا کے ذریعے پتا چلا اور جیسے ہی مجھے پتا چلا میں نے بیٹے کو فوری طور پر کہا ہے وہ گلبرگ تھانے جا کر شامل تفتیش ہوجائے، اگر بیٹے یا کسی نے بھی کوئی جرم کیا ہے تو قانون کے مطابق سزا ملنی چاہیے، ہماری طرف سے تفتیش اور تحقیقات میں مکمل تعاون کیا جائے گا

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

یہ بھی دیکھیں

Close
Close
Close