پاکستان

فواد چوہدری نے سینٹ میں ایک بار پھر توہین آمیز تقریر کر ڈالی

اسلام آباد: سینٹ سے خطاب کرتے ہوئے ایک بار پھر فواد چوہدری نے اپنی اوقات دکھا دی اور نازیبا الفاظ کا استمعال شروع کر دیا-

سینٹ کی کاروائی شروع ہوتے ہی چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی جانب سے کہا گیا کہ ہمیں بتایا گیا تھا کہ وفاقی وزیر ایوان میں آکرمعافی مانگیں گے۔

سینیٹ میں قائد ایوان شبلی فراز نے کہا کہ ہم نے مناسب سمجھا کہ وزیر آ کر معذرت یا وضاحت کریں۔

اس کے بعد فواد چوہدری نے نہایت بدتمیزی سے جواب دیا کہ میں وضاحت کر دیتا ہوں  جس پر چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ آپ پہلے معذرت کریں۔

فواد چوہدری نے کہا کہ میں کس چیز کی معافی مانگوں، کیا ڈاکو کو ڈاکو نہ کہوں۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ میں نے قومی اسمبلی میں جب معذرت کی تو لوگوں نے تنقید کی، قومی خزانہ لوٹا گیا، میں معذرت کیوں کروں، انہوں نے پی آئی اے کے ساتھ کیا کیا، اپنے خاندان کو بھرتی کیا، ڈاکو سے کیوں معذرت کریں۔

(ن) لیگ کے چیئرمین راجہ ظفر الحق نے کہا کہ چیئرمین سینیٹ نے کہہ دیا کہ پہلے معذرت کریں تو پھر عمل ہونا چاہیے۔

چیئرمین سینیٹ نے 15 منٹ کے لیے فواد چوہدری کو ایوان سے باہر نکال دیا-

ازاں وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے ایوان میں آکر معذرت کی جس پر چیئرمین سینیٹ نے انہیں اظہار خیال کرنے کی اجازت دی۔

فواد چوہدری نے دوبارہ اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے ادارے اس وجہ سے تباہ ہوئے کیونکہ ان میں خلاف ضابطہ ترقیاں کی گئیں۔

وفاقی وزیر نے ایک بار پھر سینیٹر مشاہد اللہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ان کے دو بھائیوں کو پی آئی اے میں بڑے عہدے دیئے گئے۔

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close
Close